مسواک رب کی خوشنودی کا باعث ہے

تحریر : ابو ضیاد محمود احمد غضنفر حفظ اللہ عن عائشة الله عن النبى ما قال: ( (السواك مطهرة للفم مرضاة للرب )) [أخرجه النسائي، وابن حبان فى صحيحه وأخرجه ابن خزيمة بطريق أخرى فى صحيحه، والحاكم فى المستدرك] سیدہ عائشہ رضی اللہ عنہا نے نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم سے روایت کیا آپ نے ارشاد فرمایا: ”مسواک منہ کی پاکیزگی اور رب کی خوشنودی کا باعث ہے ۔“ امام نسائی رحمہ اللہ نے اسے نقل کیا ہے اور ابن حبان نے اپنی صحیح میں بیان کیا اور ابن خزیمہ نے ایک دوسری سند سے اپنی صیح میں بیان کیا اور حاکم نے مستدرک میں ۔ تحقیق و تخریج: یہ حدیث صحیح ہے۔ مسند امام احمد: 2/ 47 26 124 238 ، نسائی: 1/ 10 ابن حبان: 143 ابن خزیمه: 135 ، الدارمی: 290 البیهقی: 1/ 34 بخاری: 87/4 وأخرج (۱) مسلم…

Continue Readingمسواک رب کی خوشنودی کا باعث ہے

کیا سگریٹ پینے سے وضو ٹوٹ جاتا ہے؟

ماہنامہ السنہ جہلم جواب: سگریٹ نوشی حرام ہے ، اسے ترک کرنا واجب ہے ۔ صحت کے لیے انتہائی مضر ہے ۔ مہلک بیماریوں کا سبب ہے ۔ مال کا ضیاع ہے ۔ تمباکو سے فرشتوں اور انسانوں کو ایذا پہنچتی ہے ۔ ایسا شخص جب مسجد کو آئے ، تو منہ صاف کر لے ، البتہ وضو نہیں ٹوٹتا ۔

Continue Readingکیا سگریٹ پینے سے وضو ٹوٹ جاتا ہے؟

کیا بے وضو وظائف پڑھے جاسکتے ہیں؟

تحریر : ابو ضیاد محمود احمد غضنفر حفظ اللہ وعن عائشة قالت: ( (كان النبى صلی اللہ علیہ وسلم يذكر الله على كل أحيانه)) [أخرجوه إلا البخاري والنسائي] عائشہ رضی اللہ عنہا سے روایت ہے فرمایا: ”نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم ہر وقت اللہ کا ذکر کرتے رہتے تھے۔“ بخاری اور نسائی کے علاوہ محدثین نے یہ حدیث روایت کی ۔ تحقیق و تخریج: مسلم: 373 فوائد: ➊ اللہ تعالیٰ کا ذکر ضروری ہے ۔ ہر حال میں ذکر کرنا چاہیے نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم ہمہ وقت ذکر کرتے تھے ہر حال سے مراد یسے اوقات ہیں جو ذکر کے لیے مناسب ہوتے ہیں ۔ بول و براز کرتے وقت یا برہنہ حالت میں ذکر نہیں کرنا چاہیے ۔ اسی طرح اگر نشے کی حالت ہو تو پھر بھی گریز کرنا چاہیے ۔ ➋ بےوضو حالت میں وظائف وغیرہ کیے…

Continue Readingکیا بے وضو وظائف پڑھے جاسکتے ہیں؟

کیا میت کو غسل دینے والے پر غسل لازم ہے؟

تحریر : ابو ضیاد محمود احمد غضنفر حفظ اللہ وعن أبى هريرة عن النبى صلی اللہ علیہ وسلم قال: من غسله الغسل ومن حمله الوضوء يعني الميت [أخرجه الترمذي وقال: حديث حسن قلت: ورجاله رجال مسلم] حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے وہ نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم سے روایت کرتے ہیں آپ نے ارشاد فرمایا: میت کو غسل دینے سے خود غسل کرنا ہوگا اور اس کو اٹھانے سے وضوء کرنا ہوگا ۔ ترمذی نے اس حدیث کو نقل کیا اور کہا ہے کہ یہ حدیث حسن ہے میں کہتا ہوں اس کے رجال مسلم کے رجال ہیں ۔ تحقیق و تخریج: یہ حدیث صحیح ہے ۔ امام احمد بن حنبل رحمہ اللہ: 2/ 454 ابو داود: 3161 ابن ماجه: 1463 ، ترمذی: 993 کہا کہ یہ حدیث حسن ہے ۔ بیھقی 1/ 300 301 ابن حبان: 1158…

Continue Readingکیا میت کو غسل دینے والے پر غسل لازم ہے؟

بکری، بھیٹر، مرغی وغیرہ کے گوشت کھانے سے وضو؟

تحریر : ابو ضیاد محمود احمد غضنفر حفظ اللہ وعن جابر بن سمرة أن رجلا سأل النبي صلی اللہ علیہ وسلم: أنتوضأ من لحوم الغنم؟ قال: ( (إن شئت فتوضأ وإن شئت فلا تتوضأ )) فقال: توضأ من لحوم الإبل؟ قال: ( (نعم، فتوضأ من لحوم الإبل ، قال: أصلي فى مرابض الغنم؟ قال: ( (نعم)) قال: أصلي فى مبارك الإبل؟ قال ( (لا )) [أخرجه مسلم] جابر بن سمرہ سے روایت ہے کہ ایک شخص نے نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم سے دریافت کیا ، کیا ہم بکری کے گوشت کے استعمال سے وضو کیا کریں؟ آپ نے ارشاد فرمایا: ”چاہو تو وضو کر لیا کرو اور چاہو وضو نہ کرو اس نے پوچھا کیا میں اونٹ کے گوشت کے استعمال سے وضو کیا کروں آپ نے فرمایا ہاں اونٹ کے گوشت کے استعمال سے وضو کیا کر اس نے کہا:…

Continue Readingبکری، بھیٹر، مرغی وغیرہ کے گوشت کھانے سے وضو؟

کیا قے آنے سے وضو ٹوٹ جاتا ہے؟

تحریر : ابو ضیاد محمود احمد غضنفر حفظ اللہ عن إسماعيل بن عياش قال حدثني ابن جريج عن أبيه قال: قال رسول الله صلی اللہ علیہ وسلم: ( (إذا فاء أحدكم فى صلاته أو قلس؛ فلينصرف فليتوضأ، وليين على صلاته مالم يتكلم)) قال ابن جريج وحدثني ابن أبى مليكة عن عائشة عن النبى صلی اللہ علیہ وسلم مثله أخرجه الدار قطني بالإسنادين من وجهين واللفظ لأحد هما والآخر نحوه، وإسماعيل بن عياش وثقه أحمد ويحيى بن معين مطلقا فى رواية وأثنى يزيد بن هارون على حفظه ثناء أ بليعا ۚ وضعف جماعة روايته عن الحجازيين وصححوا روايته عن الشاميين (قلت: وهذا من روايته عن الحجازين) اسماعیل بن عیاش سے روایت ہے اس نے کہا: کہ مجھے ابن جریج نے بتایا اس نے اپنے باپ سے روایت کیا اس نے کہا کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا: ”جب کوئی تم…

Continue Readingکیا قے آنے سے وضو ٹوٹ جاتا ہے؟

کیا ننگی شرمگاہ کو ہاتھ لگانے سے وضو ٹوٹ جاتا ہے؟

تحریر : ابو ضیاد محمود احمد غضنفر حفظ اللہ وروى قيس بن طلق عن أبيه قال: خرجنا وفدا حتى قدمنا على رسول الله صلی اللہ علیہ وسلم فبايعناه وصلينا معه فلما قضى الصلاة؛ جاءه رجل كأنه بدوي فقال: يا رسول الله ما ترى في رجل مس ذكره وهو فى الصلاة فقال: ( (وهل وهو إلا مضغة منك أو بضعة منك )) [أخرجه أبو داود، وصححه بعضهم، وتكلم فيه غيره] قیس بن طلق نے اپنے باپ سے روایت کیا فرماتے ہیں کہ ہمارا وفد روانہ ہوا یہاں تک کہ ہم رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے پاس آگئے ہم نے آپ کی بیعت کی اور ہم نے آپ کے ساتھ نماز پڑھی ، جب نماز ادا کرلی تو آپ کے پاس آدمی آیا گویا کہ وہ ایک بدوی ہے اس نے کہا: یا رسول صلی اللہ علیہ وسلم آپ کی اس شخص کے…

Continue Readingکیا ننگی شرمگاہ کو ہاتھ لگانے سے وضو ٹوٹ جاتا ہے؟

بغیر طہارت کے نماز قبول نہیں ہوتی

تحریر : ابو ضیاد محمود احمد غضنفر حفظ اللہ عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ رَضِيَ اللَّهُ عَنْهُ قَالَ: قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم لَا يَقْبَلُ اللَّهُ صَلَاةَ أَحَدِكُمْ إِذَا أَحْدَثَ حَتَّى يَتَوَضَّا حضرت ابوہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہا کہ رسول الله صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا : ”اللہ تم میں سے کسی ایسے شخص کی نماز قبول نہیں کرتے جب کہ اس کا وضو ٹوٹ جاتا ہے یہاں تک کہ وہ وضو کرے “۔ [متفق عليه] حضرت عبداللہ بن عباس رضی اللہ عنہا کے حوالے سے دو قبروں والی حدیث پہلے گذر چکی ہے ۔ تحقیق و تخریج : بخاری: 6954 ، مسلم : 225 فوائد : ➊ بغیر طہارت کے نماز قبول نہیں ہوتی ۔ ➋ نماز کے دوران اگر وضو ٹوٹ جائے تو وضو دوبارہ کر لینا چاہیے ۔ ➌ نماز کو قبول کرنا نہ کرنا…

Continue Readingبغیر طہارت کے نماز قبول نہیں ہوتی

آدمی اگر اپنی بیوی بچے کا بوسہ لے لے تو وضو نہیں ٹوتا

تحریر : ابو ضیاد محمود احمد غضنفر حفظ اللہ وروى عبد الكريم الحزري، عن عطاء عن عائشة: ((أن النبى صلی اللہ علیہ وسلم كان يقبل ، ثم يصلى ولا يتوضا [أخرجه الدار قطني وغيره، ورحاله هؤلاء رجال الصحيحين وقد أعل] عبد الکریم جزری عطاء سے روایت کرتے اور وہ حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا سے روایت کرتے ہیں: ”نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم بوسہ لیتے تھے پھر نماز پڑھتے اور وضو نہیں کرتے تھے ۔“ دارقطنی اور اس کے علاوہ نے روایت کیا اس کی سند کے رجال صحیحین میں سے ہیں ۔ تحقیق و تخریج: یہ حدیث صحیح ہے ۔ مسند امام احمد بن حنبل رحمہ اللہ: 201/6 ابو داؤد: 179 ترمذی: 85 نسائی 101/1 ابن ماجه: 502 الدارقطنی: 1/ 137 سنن ترمذی جلد اصفحہ 135-138 پر شیخ احمد محمد شاکر کی تعلیقات کا مطالعہ کریں ۔ فوائد: ➊ وضو کی…

Continue Readingآدمی اگر اپنی بیوی بچے کا بوسہ لے لے تو وضو نہیں ٹوتا

مذی آنے سے وضو کرنا ضروری ہے

تحریر : ابو ضیاد محمود احمد غضنفر حفظ اللہ وروى مسلم من حديث محمد بن الحنفية عن على رضى الله عنه (أنه) قال: استحييت أن أسأل رسول الله صلی اللہ علیہ وسلم عن المذي من أجل فاطمة، فأمرت المقداد فسأله، فقال: ((منه الوضوء)) مسلم نے محمد بن حنفیہ سے روایت کیا اور انہوں نے حضرت علی رضی اللہ عنہ سے روایت کیا کہتے ہیں کہ میں فاطمہ رضی اللہ عنہا کی وجہ سے رسول الله صلی اللہ علیہ وسلم سے مذی کے بارے میں  پوچھنے سے شرمایا میں نے مقداد کو حکم دیا کہ وہ آپ سے پوچھے تو آپ نے ارشاد فرمایا: ”اس سے وضوء ہے ۔“ تحقیق و تخریج: بخاری: 178٬132 مسلم: 303 وعنده فى رواية عن ابن عباس، عن على فيها: ((توضأ وانضح فرجك)) مسلم کے نزدیک حضرت عبد اللہ بن عباس کے حوالے سے اس مسئلہ کے بارے میں…

Continue Readingمذی آنے سے وضو کرنا ضروری ہے

اونگھنے سے وضوء نہیں ٹوٹتا گہری نیند میں وضوء لازمی ہے

تحریر : ابو ضیاد محمود احمد غضنفر حفظ اللہ عن أنس رضى الله عنه قال : كان أصحاب رسول الله صلى الله عليه وسلم ينامون، ثم يقومون فيصلون ولا يتوضرون [اخرجه مسلم] انس رضی اللہ عنہ سے روایت ہے فرمایا: ”رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے صحابہ سو جاتے تھے پھر اٹھتے نماز پڑھتے اور وضو نہیں کرتے تھے ۔ مسلم تحقیق و تخریج: مسلم: 3746 اس حدیث میں سونے سے مراد اونگھتا ہے اور جگنے سے وضو نہیں ٹوٹتا البتہ گہری نیند سو جانے سے وضو ٹوٹ جاتا ہے ۔ وفي رواية عند أحمد بن عبيد: ((ينامون، ثم يقومون فيصلون ولا يتوضرون على عهد رسول الله صلی اللہ علیہ وسلم )) احمد بن عبید کے حوالے سے ایک روایت میں ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے عہد مبارک میں صحابہ سو جاتے پھر اٹھتے نماز پڑھتے اور وضوء…

Continue Readingاونگھنے سے وضوء نہیں ٹوٹتا گہری نیند میں وضوء لازمی ہے

ہمیشہ با وضو رہنا بہت بڑاعمل ہے

تحریر : ابو ضیاد محمود احمد غضنفر حفظ اللہ ومن حديث بريدة قال : أصبح رسول الله صلی اللہ علیہ وسلم فدعا بلالا فقال: ((يا بلال بم سبقتني إلى الجنة؟ فإني ما دخلت الجنة قط إلا وسمعت خشخشتك أمامي)) وفيه: فقال بلال: يا رسول الله ما أذنت قط إلا صليت ركعتين وما أصابني حدت قط إلا توضات عندها ورأيت أن لله على ركعتين فقال رسول الله صلی اللہ علیہ وسلم ((بهما )) [لفظ رواية الترمذي وحكم بصحته] بریدہ سے روایت ہے کہتے ہیں کہ رسول اللهِ صلى الله عليه وسلم نے ایک صبح حضرت بلال کو بلایا اور ارشاد فرمایا: ”اے بلال تو مجھ سے پہلے جنت میں کس عمل کی وجہ سے گیا میں جب بھی جنت میں داخل ہوا تیرے جوتوں کی آواز میں نے اپنے سامنے سنی ۔“ اسی روایت میں ہے کہ بلال نے عرض یا رسول اللہ صلی…

Continue Readingہمیشہ با وضو رہنا بہت بڑاعمل ہے

وضو کے بعد پانی سے شلوار یا پینٹ پر چھینٹے مارنا صحیح ہے

تحریر : ابو ضیاد محمود احمد غضنفر حفظ اللہ حافظ ابو محمد عبد اللہ بن عبد الرحمن دارمی نے اپنی مسند میں عبد اللہ بن عباس رضی اللہ عنہ کے حوالے سے حدیث بیان کی کہ رسول الله صلی اللہ علیہ وسلم نے ایک ایک مرتبہ وضو کیا اور پانی کے چھینٹے مارے۔“ اس کی سند صحیح ہے۔ تحقیق و تخریج: یہ حدیث صحیح ہے ۔ الدار می: 717 بخاری: 1/ 50 ۔ فوائد: ➊ وضو سے فارغ ہونے کے بعد پانی سے چادر شلوار یا پینٹ پر چھینٹے مارنا صحیح ہے ۔ تاکہ مزید اندیشہ رفع ہو جائے ۔

Continue Readingوضو کے بعد پانی سے شلوار یا پینٹ پر چھینٹے مارنا صحیح ہے

ایک مد پانی سے وضو

تحریر : ابو ضیاد محمود احمد غضنفر حفظ اللہ «وعن أنس قال ((كان النبى يتوضأ بالمد ويغتسل بالصاع إلى خمسة أمداد ))» [لفظ رواية مسلم، وهو متفق عليه] ¤ حضرت انس رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ نبی کریم صلى الله عليه وسلم ایک مد پانی سے وضو کر لیا کرتے تھے اور ایک صاع سے لے کر پانچ مدوں تک پانی سے غسل کر لیا کرتے تھے ۔ لفظ مسلم کی روایت کے ہیں اور یہ متفق علیہ ہے ۔ ¤ تحقیق و تخریج: بخاری: 201 مسلم: 325 ۔ ¤ فوائد: ¤ ➊ مناسب مقدار پانی سے وضو اور غسل کرنا چاہیے جیسا کہ آپ صلى الله عليه وسلم ایک مد سے وضو فرماتے اور ایک صاع سے غسل فرماتے ۔ ایک صاع اڑھائی کلوگرام کا ہوتا ہے اور چار مدہوں تو ایک صاع بنتا ہے ۔ ¤ ➋ کم سے…

Continue Readingایک مد پانی سے وضو

End of content

No more pages to load