Category: متفرق

کمزور ناتواں انسان کے لیے زنا کی حد میں نرمی کرنا ؟

تحریر: ابو ضیا محمود احمد غضنفر وَعَنِ ابْنِ شِهَابٍ، قَالَ أَخْبَرَنِي أَبُوأمَامَةَ بْنُ سَهْلِ بْنِ حُنَيْفٍ، أَنَّهُ أَخْبَرَهُ بَعْضُ أَصْحَابِ رَسُولِ اللَّهِ لَ مِنَ الْأَنْصَارِ، أَنَّهُ اشْتَكَى رَجُلٌ مِنْهُمْ حَتَّى أَضْنَى فَعَادَ جِلْدَةً عَلَى عَظْمٍ فَدَخَلَتُ عَلَيْهِ جَارِيَةٌ لِبَعْضِهِمْ فَهَسٌ (لَهَا) فَوَقَعَ عَلَيْهَا، فَلَمَّا دَخَلَ عَلَيْهِ رِجَالُ قَوْمِهِ يَعُودُونَهُ أَخْبَرَهُمْ

مزید پڑھیں...

ذمی لوگوں کی کس کے خلاف شہادت معتبر ہوتی ہے ؟

تحریر: ابو ضیا محمود احمد غضنفر وَعِنْدَ مُسْلِمٍ: فِي حَدِيثِ حَابِرٍ بْنِ عَبْدِ اللَّهِ رَضِيَ اللَّهُ عَنْهُمَا قَالَ: رَحَمَ النَّبِيُّ رَجُلًا مِنْ أَسْلَمَ، وَرَجُلًا مِنَ الْيَهُودِ وَامْرَأَتَهُ مسلم شریف میں جابر بن عبداللہ سے رضی اللہ عنہ سے روایت ہے وہ کہتے ہیں کہ نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم

مزید پڑھیں...

رجم کرنے کا کیا حکم ہے ؟

تحریر: ابو ضیا محمود احمد غضنفر وَمِنْ حَدِيثِ ابْنِ عَبَّاسٍ رَضِيَ اللَّهُ عَنْهُمَا (يَقُولُ) قَالَ عُمَرُ بْنُ الْخَطَّابِ رَضِيَ اللَّهُ عَنْهُ وَهُوَ جَالِسٌ عَلَى مِنْبَرِ رَسُولِ اللَّهِ مَلَ: إِنَّ اللهَ عَزَّ وَجَلَّ بَعَثَ مُحَمَّدًا بِالْحَقِّ، وَأَنزَلَ عَلَيْهِ الْكِتَابَ فَكَانَ مِمَّا أَنزَلَ اللَّهُ عَزَّوَجَلَّ)عَلَيْهِ آيَةً الرَّحِمِ، قَرَأْنَاهَا، وَوَعَيْنَا هَا، وَعَقَلْنَاهَا، فَرَجَمَ

مزید پڑھیں...

غیر مسلم کے مسلمان ہونے کی فضلیت کیا ہے ؟

تحریر: ابو ضیا محمود احمد غضنفر وَفِي حَدِيثِ الْمِقْدَادِ رَضِيَ اللَّهُ عَنْهُ: أَنَّهُ قَالَ يَا رَسُولَ اللَّهِ أَرَأَيْتَ إِنْ لَاقَيْتُ رَجُلًا مِنَ الْكُفَّارِ فَقَاتَلَنِي ، فَضَرَبَ إِحْدَى يَدَيَّ بِالسَّيْفِ فَقَطَعَهَا ثُمَّ لَاذَ بِشَجَرَةٍ، فَقَالَ: أَسْلَمْتُ لِلَّهِ أَفَاقْتُلُهُ يَا رَسُولَ اللَّهِ بَعْدَ أَنْ قَالَهَا؟ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ مَا: ( (لَا تَقْتُلُهُ

مزید پڑھیں...

سریہ کون سی جنگ ہوتی ہے ؟

تحریر: ابو ضیا محمود احمد غضنفر وَعَنْ أَسَامَةَ بْنِ زَيْدٍ رَضِيَ اللَّهُ عَنْهُمَا قَالَ بَعَثْنَا رَسُولُ اللهِ مَا فِي سَرِيَّةٍ فَصَبَّحْنَا . الْحُرِّقَاتِ مِنْ جُهَيْنَةَ، فَأَدْرَكْتُ رَجُلًا فَقَالَ: لَا إِلَهَ إِلَّا اللهُ، فَطَعَنَتُهُ، فَوَقَعَ فِي نَفْسِي (مِنْ ذَلِكَ) فَذَكَرْتُهُ لِلنَّبِيِّ مَن فَقَالَ رَسُولُ اللَّهِ مَن ): میرام) أَقَالَ لَا إِلَهَ

مزید پڑھیں...

اسلام کے اندر آنے کی شرائط کیا ہیں ؟

تحریر: ابو ضیا محمود احمد غضنفر وَمِنْ حَدِيثِ ابْنِ عُمَرَ رَضِيَ اللَّهُ عَنْهُمَا قَالَ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ عَلَ: ( (أُمِرْتُ أَنْ . أَقَاتِلَ النَّاسَ حَتَّى يَشْهَدُوا أَنْ لَا إِلَهَ إِلَّا اللَّهُ وَأَنَّ مُحَمَّدًا رَسُولُ اللَّهِ، يُقِمُوا الصَّلَاةَ، وَيُؤْتُوا الزَّكَاةَ فَإِذَا فَعَلُوا ذَلِكَ فَقَدْ عَصَمُوا مِنِّي دِمَانَهُمْ وَأَمْوَالَهُمْ إِلَّا بِحَقِّ الْإِسْلَامِ

مزید پڑھیں...

سیاہ خضاب کی ممانعت کے دلائل

تحریر:حافظ ندیم ظہیر, پی ڈی ایف لنک سیاہ خضاب کی شرعی حیثیت الحمد لله رب العلمين والصلوة والسلام على رسوله الأمين، أما بعد: اسلاف کے متفقہ فہم سے کسی کو انکار نہیں کیونکہ قرآن و حدیث کا وہی مفہوم معتبر ہے جو سلف صالحین یعنی صحابہ کرام، تابعین اور ائمہ

مزید پڑھیں...

کیا عاشوراء کے دن اہل خانہ پر خرچ کرنے کی کوئی خاص فضیلت ہے؟

تحریر: غلام مصطفی ظہیر امن پوری عاشوراء کے دن اہل خانہ پر خرچ کرنا کہا جاتا ہے کہ عاشوراء کے دن خاص کر کے گھر والوں کو عمدہ کھانا کھلانا اور ان پر خوب خرچ کرنا آئندہ سال تک کشادگی اور خوش حالی کا باعث ہے، مگر عاشوراء کی یہ

مزید پڑھیں...

صرف ہفتے والے دن کے نفلی روزے کا کیا حکم ہے؟

تحریر: حافظ زبیر علی زئی صرف ہفتے والے دن کے نفلی روزے کا حکم؟ سوال صرف ہفتے والے دن کے نفلی روزے کا کیا حکم ہے؟ (نوید شوکت، ڈربی ۔ برطانیہ) الجواب سیدنا عبد الله بن بسرؓ اور ان کی بہن صماء المازنیہ وغیر ہما سے مروی ایک حدیث کا

مزید پڑھیں...

آیت (اتَّخَذُوا أَحْبَارَهُمْ وَرُهْبَانَهُمْ أَرْبَابًا مِّنْ دُونِ اللَّهِ) کی تفسیر

تحریر: حافظ زبیر علی زئی آیت (اتَّخَذُوا أَحْبَارَهُمْ وَرُهْبَانَهُمْ أَرْبَابًا مِّنْ دُونِ اللَّهِ) کی تفسیر سوال سوال یوں ہے کہ ترمذی کی روایت ۳۰۹۵ جس کی سند کچھ اس طرح ہے: حدثنا الحسين بن يزيد الكوفي : حدثنا عبد السلام بن حرب عن غطيف بن أعين عن مصعب بن سعد

مزید پڑھیں...

حضرت حسین رضی اللہ عنہ کا مختصر تعارف

تحریر: قاری اسامہ بن عبدالسلام حضرت حسین رضی اللہ عنہ کا مختصر تعارف ➊ نام حسین بن علی رضی اللہ عنہ  الاستيعاب في معرفة الأصحاب لابن عبد البر (368ھ -463ھ) جلد3-(1089)حسن ➋ نسب نامہ حسین بن علی بن أبی طالب بن عبدالمطلب الاستيعاب في معرفة الأصحاب لابن عبد البر 1089(-بن

مزید پڑھیں...

غیر مستند ڈاکٹر یا حکیم کے ہاتھوں کوئی مر جائے تو؟

تحریر: ابو ضیا محمود احمد غضنفر وَعَنْ عَمْرِو بْنِ شُعَيْبٍ، عَنْ أَبِيهِ، عَنْ جَدِهِ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ مَا قَالَ: ( (مَنْ تَطَبَّبَ وَلَا يُعْلَمُ مِنْهُ طِبٌ، فَهُوَ ضَامِنٌ)) أَخْرَجَهُ أَبُو دَاوُدَ . عمرو بن شعیب اپنے باپ سے اور وہ اپنے دادا سے کہ رسول الله صلی اللہ علیہ وسلم

مزید پڑھیں...

جانور کسی اور کی فصل میں چلا جائے ؟

تحریر: ابو ضیا محمود احمد غضنفر بَابٌ جِنَايَةِ الْبَهَائِمِ وَغَيْرِهِ رَوَى مَعْمَرٌ، عَنِ الزُّهْرِيِّ، عَنْ حَرَامِ بْنِ مُحَبِّصِةَ ، عَنْ أَبِيهِ، أَنَّ نَاقَةَ الْبَرَاءِ بْنِ عَازِبٍ دَخَلَتْ حَائِطَ قَوْمٍ فَأَفْسَدَتْ فِيهِ، فَقَضَى رَسُولُ اللهِ عَلَى أَهْلِ الْأَرْضِ حِفْظَهَا بِالنَّهَارِ، وَعَلَى أَهْلِ الْمَوَاشِي حِفْظَهَا بِاللَّيْلِ أَخَرَجَهُ ابْنُ حِبَّانَ مِنْ حَدِيثِ مَعْمَرٍ،

مزید پڑھیں...

جنگ میں مزدور رکھنا ؟

تحریر: ابو ضیا محمود احمد غضنفر وَعَنْ صَفْوَانَ بْنِ يَعْلَى، أَنْ أَجِيرًا لِيَعْلَى بْنِ مُنَبِّهِ، عَضَّ رَجُلٌ ذِرَاعَهُ فَجَذَبَهَا فَسَقَطَتُ ثَنِيتُهُ، فَرُفِعَ إِلَى النَّبِيِّ لَا فَأَبْطَلَهَا، وَقَالَ: أَرَدْتَ أَنْ تَقْضِمَهَا كَمَا يَقْضِمُ الْجَمَلُ )) مُتَّفَقٌ عَلَيْهِ صفوان بن یعلی سے روایت ہے کہ یعلی بن منہ کا ایک مزدور تھا،

مزید پڑھیں...