نئے مضامین

چوری کرنا کیسا عمل ہے ؟

تحریر: ابو ضیا محمود احمد غضنفر بَابٌ حَةِ السَّرِقَةِ عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ رَضِيَ اللَّهُ عَنْهُ قَالَ: قَالَ رَسُولُ اللَّهِ مَ: ( (لَعَنَ اللهُ السَّارِقَ يُسْرُقُ

مکمل مضمون پڑھیں۔۔۔

سدومیت کیسا فعل ہے ؟

تحریر: ابو ضیا محمود احمد غضنفر وَرَوَى عَمْرُو أَيْضًا، عَنْ عِكْرَمَةَ عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ قَالَ: قَالَ رَسُولُ اللَّهِ ﷺ: ( (مَنْ وَجَدتُمُوهُ وَقَعَ عَلَى بَهِيمَةٍ

مکمل مضمون پڑھیں۔۔۔

رجم کے بدلے مال وصول کرنا ؟

تحریر: ابو ضیا محمود احمد غضنفر وَعَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ ، وَزَيْدِ بْنِ خَالِدِ (الْجُهَنِيِّ رَضِيَ اللَّهُ عَنْهُمَا، أَنَّهُمَا قَالَا: إِنَّ رَجُلًا مِنَ الْأَعْرَابِ أَتَى رَسُولَ

مکمل مضمون پڑھیں۔۔۔

خطا کار زانی پر حد لگانا ؟

تحریر: ابو ضیا محمود احمد غضنفر وَفِي رِوَايَةِ سُلَيْمَانَ بْنِ بُرَيْدَةَ، عَنْ أَبِيهِ، قَالَ: جَاءَ مَاعِرُ بْنُ مَالِكَ إِلَى النَّبِيِّ عَلَى فَقَالَ: يَا رَسُولَ اللَّهِ

مکمل مضمون پڑھیں۔۔۔

رجم کیسے کیا جائے گا ؟

تحریر: ابو ضیا محمود احمد غضنفر وَفِي رِوَايَةِ أَبِي سَعِيدٍ: أَنَّ رَجُلًا مِنْ أَسَلَمَ يُقَالُ لَهُ: مَا عِزُ بْنُ مَالِكٍ، أَتَى رَسُولَ اللَّهِ فَقَالَ: إِنِّي

مکمل مضمون پڑھیں۔۔۔

رجم کرنے کا کیا حکم ہے ؟

تحریر: ابو ضیا محمود احمد غضنفر وَمِنْ حَدِيثِ ابْنِ عَبَّاسٍ رَضِيَ اللَّهُ عَنْهُمَا (يَقُولُ) قَالَ عُمَرُ بْنُ الْخَطَّابِ رَضِيَ اللَّهُ عَنْهُ وَهُوَ جَالِسٌ عَلَى مِنْبَرِ

مکمل مضمون پڑھیں۔۔۔

سریہ کون سی جنگ ہوتی ہے ؟

تحریر: ابو ضیا محمود احمد غضنفر وَعَنْ أَسَامَةَ بْنِ زَيْدٍ رَضِيَ اللَّهُ عَنْهُمَا قَالَ بَعَثْنَا رَسُولُ اللهِ مَا فِي سَرِيَّةٍ فَصَبَّحْنَا . الْحُرِّقَاتِ مِنْ جُهَيْنَةَ،

مکمل مضمون پڑھیں۔۔۔

نبی کو گالی دینا ؟

تحریر: ابو ضیا محمود احمد غضنفر وَفِي الْحَدِيثِ لِلنِّسَائِيِّ عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ: أَنَّ أَعْمَى كَانَ عَلَى عَهْدِ رَسُولِ اللَّهِ عَلَ وَكَانَتْ لَهُ أَمْ وَلَدٍ، وَكَانَ

مکمل مضمون پڑھیں۔۔۔

آیت (اتَّخَذُوا أَحْبَارَهُمْ وَرُهْبَانَهُمْ أَرْبَابًا مِّنْ دُونِ اللَّهِ) کی تفسیر

تحریر: حافظ زبیر علی زئی آیت (اتَّخَذُوا أَحْبَارَهُمْ وَرُهْبَانَهُمْ أَرْبَابًا مِّنْ دُونِ اللَّهِ) کی تفسیر سوال سوال یوں ہے کہ ترمذی کی روایت ۳۰۹۵ جس

مکمل مضمون پڑھیں۔۔۔

یہ پوسٹ اپنے دوست احباب کیساتھ شئیر کریں

فیس بک
لنکڈان
ٹیلی گرام
وٹس اپ
ٹویٹر ایکس
پرنٹ کریں
ای میل

موضوع سے متعلق دیگر تحریریں: